نیشنل ایکشن پلان میں فاٹا اصلاحات پروزیراعظم نواز شریف نےچھ رُرکنی فاٹا ریفارمز کمیٹی تشکیل دی جس نے اپنی سفارشات 23اگست 2016کو وزیر اعظم کو پیش کردیں ۔ کمیٹی کی سفارشات کے مطابق فاٹا میں تعمیر نو اور مقامی حکومتوں کے قیام کے بعد فاٹا کو خیبر پختونخواه میں ضم کیا جائے۔۔اس کمیٹی کی سفارشات پر عمل درآمد میں کیا روکاوٹیں ہیں اور ان کی وجہ جانتے ہیں پاکستان ساگا کے نماءندے عبداللہ ملک کی اس رپورٹ میں۔

(136)

فاٹا کوخیبر پختونخواه میں ضم کرنے میں کیا روکاوٹیں ہیں؟

ساگا ویڈیوز |
About The Author
-