(اسلام آباد،30نومبر)پاکستان کے پہلے وڈیو میگزین پاکستان ساگا کے زیر اہتمام ساگا ایوارڈز اور نیرٹوز ایوارڈز کی تقریب ایک مقامی ہوٹل میں ہوئی جس کی صدارت وزیر اعظم کے خصوصی مشیر برائے قانون و انصاف و پارلیمانی امور بیرسٹڑ ظفراللہ خان نے کی جبکہ پاکستان میں جرمنی کی سفیر اینا لیپل اس موقع پر مہمان خصوصی تھیں ۔پاک انسٹی ٹیوٹ فار پیس سٹڈیز کے ڈائریکٹر محمد عامر رانا نے اس خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ساگا کو نہ صرف پاکستان کے پہلے وڈیو میگزین کا اعزاز حاصل ہے بلکہ ا س نے وڈیو صحافت کو نئی جہتوں سے بھی روشناس کروایا ہے ۔پاکستان کے سلگتے ہوئے سماجی مسائل کو اجاگر کیا جا رہا ہے ۔پاکستان کے ثقافتی اور تہذیبی ورثے کومنظر عام پر لایا جا رہا ہے۔

پاکستان کی ترقی کا راستہ بقائے باہمی میں پوشیدہ ہے امن کے بغیر کوئی قوم آگے نہیں بڑھ سکتی ۔انہوں نے کہا کہ مختصر عرصے میں پاکستان ساگا کی وڈیوز کو پزیرائی ملی ہے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ پاکستان میں اس شعبے میں کام کرنے کی بہت ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ساگا ایوارڈ ز اور نیریٹوز ایوارڈز کا اجرا بھی کیا گیا ہے ۔ساگا ایوارڈز پاکستان کے قومی میڈیا میں نشر ہونے والی ایسی وڈیو رپورٹوں کو دیا گیا جن میں کسی اہم سماجی مسئلے کو اجاگر کیا گیا ہو اور نیریٹوز ایوارڈز ’’پاکستان ساگا‘‘ میں نشر ہونے والی بہترین رپورٹ کودیا جا رہا ہے ۔ جبکہ پاکستان کا پہلا نان فکش ایوارڈ بھی سیکیورٹی امور پر دیا جا رہا ہے ۔ پاکستان کی ثقافت میں بہت تنوع ہے جس میں رواداری اور امن کی تعلیم ملتی ہے ،اسلام کی روایات بھی برداشت اور بقائے باہمی کی ہیں ۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پاکستان میں جرمنی کی سفیر اینا لیپل نے کہا ہے کہ میڈیا پاکستان میں مظلوم اور اقلیتی طبقات کے مسائل اجاگر کرنے میں اہم کردار ادا کر رہا ہے ۔اخبارات اور چینلز کے ساتھ ساتھ سوشل اور ویب میڈیا کے فروغ سے پاکستان میں امن ، انصاف ،برداشت اور بقائے باہمی کی راہیں ہموار ہو رہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں محروم اور پسے ہوئے طبقات کے مسائل اجاگر کرنے میں میڈیا بہت ممدو معاون ثابت ہو سکتا ہے ۔وزیر اعظم کے مشیر بیرسٹر ظفراللہ نے کہا کہ جب تک ہمارے اسلاف جدت فکر پر آمادہ رہے زمانے میں ہمارا ڈنکا بجتا رہا ،لیکن جب انہوں نے زمانے کی رفتار کو چھوڑ دیا تو وہ گمرائیوں کا شکار ہو گئے ۔ اسلام ایک جدت پسند مذہب ہے جو آپ کواپنی ضروریات اور ترجیحات کے مطابق اصول وضح کرنے کی آزادی دیتا ہے پاکستان میں مذہب ، سول ملٹری تعلقات اور وفاقیت کے بیانیوں پر از سر نو غور کرنے کی ضرورت ہے ،مذہب کی اچھی تعبیر کی جائے تو غلام بھی بادشاہ بن جاتے ہیں ۔

اس موقع پر ملتان سے تعلق رکھنے والی صحافی میمونہ سعید کو نیریٹو ایوارڈ دیا گیا انہیں یہ اعزاز عیسائی برادری کے مسائل پر مشتمل ایک وڈیو ’’اپنا گند خود صاف کرو‘‘ پر دیا گیا جبکہ پاکستان ساگا ایوارڈ زرغون شاہ کی وڈیو پر دیا گیا جس میں ایک بچہ جو کچرا اٹھاتا ہے وہ اپنی محنت کے بل بوتے پر یونیورسٹی کا طالب علم بن جاتا ہے ۔ جبکہ پاکستان میں امن اور تنازعات پر نان فکشن ایوارڈ ڈاکٹڑ فرحان زاہد کو دیا گیا ۔ایوارڈز کی اس رنگا رنگ تقریب میں صوفیانہ کلام بھی گایا گیا ۔

(366)

معاشرتی ہم آہنگی اور امن کے لئے پاکستان ساگا کے ایوارڈز

تقریبات |
About The Author
-