تعلیم کی نعمت سے انسان کی فکر کے بند دروازے کھل جاتے ہیں اور شعور و آگہی کی آمد سے دماغ روشن ہوجاتا ہے۔ اس لئے تعلیمی اداروں کو ایسی شمع سے تشبیہہ دی جاتی ہے جو ہمیشہ جلتی رہتی ہے۔ بدقسمتی سمجھئے کہ پاکستان میں تعلیمی ادارے ہی پچھلے چند سالوں سے انتہأ پسندی کی لعنت کا گڑھ بنتے چلے گئے ہیں ۔ اس معاملے پر جہاں ریاست اور سماج فکر مند ہے وہیں اساتذہ بھی پریشاں حال ہیں ۔ ایسا کیوں ہوا اور اس کا حل کیسے ممکن ہے ۔ ہمارے ساتھی سبوخ سید نے معروف اہل علم کےسامنے یہ سوال رکھا اور اس رپورٹ کو پاکستان ساگا کے لئے ارسال کیا۔

(27)

تعلیمی درسگاہوں میں انتہأ پسندی کا بڑھتا ہوا عفریت

ساگا ویڈیوز |
About The Author
-