دہشتگردی اور انتہا پسندی سے متاثرہ صوبہ خیبر پختونخواہ ایک جانب امن و امان کی خراب صورتحال سے متاثر رہا ہے تو دوسری جانب یہاں فنون لطیفہ سے تعلق رکھنے والے فنکاروں اور گلوکاروں کے لئے بھی گزشتہ دو دہائیوں سے عرصہ حیات تنگ ہے۔ خاص طور پر خواتین فنکاراؤں کے لئے نا صرف سماجی سطح پر کوئی عزت احترا م کے جذبات نہیں ہیں بلکہ انہیں اپنے ہی خاندان کے مردوں کی جانب سے بھی تکالیف دی جارہی ہیں ۔ پچھلے چند سالوں میں سوات اور پشاور میں خواتین گلوکاراؤں کی بڑی تعداد اپنے ہی خاندان کے مردوں کے ہاتھوں مختلف تنازعات کی بنیاد پر قتل ہوئی ہے ۔ سوات سے حمد نواز نے اپنی اس رپورٹ میں ایسے ہی ایک واقعے اور اس سے جڑی کہانی کی جانچ کی ہے ۔

(20)

کے پی کی گلوکاراؤں کا تحفظ کون کرےگا؟

ساگا ویڈیوز |
About The Author
-